Reiki for health care and well-being, Reiki training classes in Urdu and English, Reiki Master/Teacher Muhammad Akram Khan in Lahore, Pakistan
 

کیا ریکی سے جادُو کا علاج ہو سکتا ہے؟

بہت سے لوگ مجھ سے پوچھتے ہیں کہ کیا ریکی سے جادُو کا علاج ہو سکتا ہے۔ میرا خیال ہے کہ اس سوال کے جواب سے پہلے ایک نہائیت اہم پہلو کی نشان دہی ضروری ہے۔ جادُو ایک حقیقت ہے مگر سمجھنا چاہئے کہ نہ تو ہر کوئی جادُو کا شکار ہوتا ہے اور نہ ہی ہر تکلیف کالے جادُو کا نتیجہ ہوتی ہے۔

انسان کے مسائل اور تکالیف کی اصل وجہ اس کی سوچ اور رویّہ ہوتا ہے۔ بعض لوگ غلط، غیر اخلاقی اور غیر قانونی کاموں لئے مجبوریوں کو جواز بنا لیتے ہیں۔ حقیقت یہ ہے کہ قدرت انسانی دلائل کے نہیں بلکہ اپنے قوانین کے مطابق کام کرتی ہے۔ ان کے مطابق بُرے کام کا نتیجہ بُرا اور اچھے کا نتیجہ اچھا ملتا ہے۔ اس طرح ہم اپنے اچھے بُرے کے خود ذمہ دار ہوتے ہیں۔

جب کوئی شخص جان بوجھ کر غلط کام کرتا ہے تو نقصان اُٹھاتا ہے۔ اگر غلط کام جاری رہتے ہیں تو نقصانات بڑھتے جاتے ہیں جن کی نوعیت کچھ بھی ہو سکتی ہے۔ ان میں بیماریاں، جھگڑے، حادثات اور مالی نقصان وغیرہ بھی ہوتے ہیں۔ بیماریوں اور دیگر مسائل کا طبی یا روحانی علاج ضرور کرنا چاہئے لیکن یہ نہیں بھولنا چاہئے کہ ہر مسئلے کا باعث جادُو نہیں ہوتا۔ بہت سے لوگ اعمال کو صرف مذہبی معاملات تک محدود سمجھتے ہیں جبکہ ایسا نہیں ہے۔ خاص طور پر بیماریوں کو تو غلط رویّے کا نتیجہ سمجھا ہی نہیں جاتا حالانکہ سب نہیں تو کافی بیماریاں ہماری اپنی منفی سوچ کا نتیجہ ہوتی ہیں۔ جیسا کہ پہلے لکھا گیا، اکثر اوقات انسان اپنے اعمال کے ذریعے اپنے لئے مسائل خود پیدا کرتا ہے مگر یا تو اسے اس بات کا شعور ہی نہیں ہوتا کہ ایسا بھی ہو سکتا ہے یا ماننا نہیں چاہتا کیونکہ انا ایسا کرنے نہیں دیتی۔ آخر کار جب اپنے مسائل کا حل تلاش نہیں کر پاتا تو اس وہم میں مبتلا ہو جاتا ہے کہ اس پر جادُو ہو گیا اور یوں عاملوں کے پاس جانا شروع کر دیتا ہے جن میں بہت سے جعلی بھی ہوتے ہیں جن کے بارے میں خبریں ٹی وی اور اخبارات میں آتی رہتی ہیں۔ اس طرح نادانستگی میں اپنے مسائل میں مذید اضافہ کرتا ہے۔ وہ اکثریت جو اپنے آپ کو جادُو کا شکار سمجھتی ہے، اسی طبقے سے تعلق رکھتی ہے۔ حالانکہ اس کا شکار بہت کم لوگ ہوتے ہیں۔ ایسا ہر جگہ ہوتا ہے مگر جنوبی ایشیا میں کچھ زیادہ ہی ہوتا ہے۔

اور اب اصل سوال کا جواب : بنیادی طور پر ریکی کا مقصد جادُو کا توڑ نہیں ہے۔ تاہم کچھ منفی توانائیوں سے کافی حد تک بچاﺅ تو کر سکتی ہے مگر سخت اور جان بوجھ کر کئے گئے باقاعدہ جادُو کا علاج نہیں کر پاتی۔ اگر کوئی ایسا دعویٰ کرتا ہے تو پھر تفصیل بھی اُسی سے پوچھی جانی چاہئے۔ عام طور پر اگر اپنے آپ کو باقاعدگی سے ریکی دی جائے تو انسان نہ صرف بہت سی منفی توانائیوں سے بچا رہتا ہے بلکہ اس کی سوچ رفتہ رفتہ مثبت ہو جاتی ہے اور حقیقت پسندی بھی آ جاتی ہے۔ اگر کردار اور سوچ مثبت ہوں تو بہت سی پریشانیوں اور مسائل سے انسان ویسے ہی بچا رہتا ہے۔ اب یہ مضمون پڑھنے کے بعد آپ کیا سوچتے اور فیصلہ کرتے ہیں، یہ آپ پر منحصر ہے۔

اور اب اصل سوال کا جواب : بنیادی طور پر ریکی کا مقصد جادُو کا توڑ نہیں ہے۔ تاہم کچھ منفی توانائیوں سے کافی حد تک بچاﺅ تو کر سکتی ہے مگر سخت اور جان بوجھ کر کئے گئے باقاعدہ جادُو کا علاج نہیں کر پاتی۔ اگر کوئی ایسا دعویٰ کرتا ہے تو پھر تفصیل بھی اُسی سے پوچھی جانی چاہئے۔ عام طور پر اگر اپنے آپ کو باقاعدگی سے ریکی دی جائے تو انسان نہ صرف بہت سی منفی توانائیوں سے بچا رہتا ہے بلکہ اس کی سوچ رفتہ رفتہ مثبت ہو جاتی ہے اور حقیقت پسندی بھی آ جاتی ہے۔ اگر کردار اور سوچ مثبت ہوں تو بہت سی پریشانیوں اور مسائل سے انسان ویسے ہی بچا رہتا ہے۔ اب یہ مضمون پڑھنے کے بعد آپ کیا سوچتے اور فیصلہ کرتے ہیں، یہ آپ پر منحصر ہے۔

اگر آپ کو یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کے ساتھ شیئر کیجئے